راحیل شریف امت کے اتحاد کا سبب بنیں گے

پاکستان کے مشیر برائے قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ کا
کہنا ہے کہ ‘ریٹائرڈ جنرل راحیل شریف سعودی عرب اور ایران کو ایک دوسرے کےقریب لائیں گے‘۔ انھوں نے یہ بات پاکستان کی بحری سکیورٹی سے متعلق چیلنجز پر اسلام آباد میں ہونے والی ایک کانفرنس کے بعد میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کے دوران کہی۔ سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے 39 مسلم ممالک پر مشتمل سعودی فوجی اتحاد کے سربراہ کے طور پر ممکنہ تعیناتی سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ‘اتحاد مخالف ممالک’ کو اطمینان ہونا چاہیے کہ ‘اس اتحاد کی کمان جنرل راحیل شریف جیسے فوجی کے ہاتھ میں ہو گی۔’

ان کے خیال میں اگر جنرل راحیل یہ عہدہ قبول کرلیتے ہیں تو وہ سعودی عرب اور ایران کے اختلافات ختم کرنے اور دونوں ملکوں کو قریب لانے میں مؤثر کردار ادا کر سکیں گے۔ جنرل جنجوعہ کے بقول راحیل شریف ‘امت مسلمہ کے اتحاد کا سبب بنیں گے۔’ پاکستانی ذرائع ابلاغ کے مطابق پاکستانی فوج کے سابق سربراہ کو دہشت گردی کے خلاف 39 مسلم ممالک کے اتحاد کا سربراہ بننے سے متعلق اجازت نامے کے اجرا کی تصدیق وزیر دفاع خواجہ آصف کر چکے ہیں۔ دسمبر 2015 میں دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے 30 سے زیادہ اسلامی ممالک نے سعودی عرب کی قیادت میں ایک فوجی اتحاد تشکیل دینے کا اعلان کیا تھا۔ اس اتحاد میں ابتدائی طور پر 34 ممالک تھے تاہم بعد ازاں ان کی تعداد 39 ہو گئی۔

لیفٹیننٹ جنرل ناصر جنجوعہ کے مطابق اس اتحاد کی سربراہی کے معاملے پر ‘ذاتی حملوں سے گریز کرتے ہوئے دور رس نتائج پر نظر رکھنا ہوگی’۔ انہوں نے کہا کہ جنرل راحیل شریف ‘اپنے تجربے اور فکر سے مسلم ممالک کی باہمی غلط فہمیوں کو دور کریں گے’۔ مشیر قومی سلامتی جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ نے انڈیا سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کہا کہ انڈیا نے دو فرنٹ کھول رکھے ہیں جو ‘گھاٹے کا سودہ’ ہے کیونکہ یہ دونوں محاذ ‘ایٹمی طاقتوں’ یعنی چین اور پاکستان کے خلاف ہیں۔ مشیر قومی سلامتی کے مطابق پاکستان میں جاری آپریشن ضرب عضب ‘ کاؤنٹر ٹیررازم ‘ تھا، جبکہ آپریشن رد الفساد ‘انتہا پسندانہ سوچ’ کے خلاف ہے۔

انہوں نے کہا کہ قومی ایکشن پلان پر کام جاری ہے جو کہ مذہبی انتہا پسندانہ بیانیے سے متعلق ہے۔ اگرچہ ان کا کہنا تھا کہ وہ ‘مدارس کے حوالے سے جلد ایک اچھی خبر’ سنائیں گے تاہم انہوں نے یہ واضح نہیں کیا کہ مدرسہ اصلاحات پر کس حد تک کام کیا جا چکا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ‘نفرت انگیز مواد کا خاتمہ بھی قومی ایکشن پلان کا حصہ ہے’، مگر انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ انٹرنیٹ پر موجود توہین آمیز مواد کے خاتمے کے لیے وزارت داخلہ کام کر رہی ہے جسے ان کی ‘مکمل حمایت’ حاصل ہے۔

فرحت جاوید

بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

Advertisements

Pakistani troops deploy outside the Police Training Center after an attack

Pakistani troops deploy outside the Police Training Center after an attack on the center in Quetta, Pakistan.

دوستی نبھانا اور دشمنی کا قرض بھی اتارنا جانتے ہیں

پاکستان بّری فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے کہا ہے کہ اپنے دشمن کی سازشوں سے بخوبی آگاہ ہیں اور ’ہم دوستی نبھانا بھی جانتے ہیں اوردشمنی کا قرض بھی اتارنا جانتے ہیں‘۔ انھوں نے یہ بات جنرل ہیڈ کوارٹرز راولپنڈی میں یوم شہدا کی مرکزی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ جنرل راحیل شریف نے کہا کہ تمام سازشوں کے باوجود سرحدوں کی حفاظت کے لیے تیار ہیں، قومی سلامتی کی خاطر کسی بھی حد تک جانے سے گریز نہیں کریں گے۔ انھوں نے خطاب میں کہا کہ ’افغانستان ہمارا ہمسایہ اور برادر ملک ہے اور افغانستان میں امن اور استحکام پاکستان کے مفاد میں ہے۔ تاہم کچھ عناصر اس میں رکاوٹ ہیں اور وہ ہرگز افغانستان سے مخلص نہیں ہیں۔ افغان حکومت کے ساتھ مل کر سرحدی نگرانی کا موثر نظام قائم کرنا چاہتے ہیں۔‘

آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا کہنا ہے کہ ہم روایتی و غیر روایتی ہر انداز میں وطن عزیز کا دفاع کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور دشمن کی ہر سازش سے بخوبی آگاہ ہیں۔ انھوں نے کہا کہ دنیا کے نزدیک ضرب عضب فوجی آپریشن ہو سکتا ہے لیکن ہمارے لیے ضرب عضب وطن کی بقا کی جنگ ہے اور ہم نے اس آپریشن کے طے شدہ مقاصد حاصل کر لیے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ شمالی وزیرستان دہشت گردوں کی آماجگاہ تھا لیکن ضرب عضب کے تحت 19 ہزار سے زائد آپریشنز کامیابی سے کیے اور یہ آپریشن دہشت گردوں کے بلا امتیا زخاتمے کا عمل تھا۔ کشمیر کے بارے میں بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ حق خوداریت کے لیے انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کی عوام کی قربانیوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔

’کشمیر ہماری شہہ رگ ہے اور کشمیریوں کی سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے جب کہ کشمیر کے عوام بدترین ریاستی تشدد کا نشانہ بن رہے ہیں تا ہم کشمیر کے مسئلے کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل کرنے سے ہی ممکن ہے۔‘ انھوں نے کہا کہ دوستوں اور دشمنوں کو بخوبی جانتے ہیں اور پاک چین دوستی کا منہ بولتا ثبوت سی پیک کا عظیم منصوبہ ہے جو پورے خطے کی خوشحالی میں مدد گار ثابت ہوگا اور سی پیک منصوبے کی بروقت تکمیل ہمارا قومی فریضہ ہے۔

’اس منصوبے میں کسی بیرونی طاقت کو راستےمیں رکاوٹ نہیں ڈالنے دیں گے، اس کے خلاف ہر کوشش سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا۔‘ پاک فوج کے سربراہ کا کہنا تھا کہ تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ پر امن تعلقات کے خواہا ہیں کیوں کہ امن کی اصل حقیت خطے میں طاقت کا توازن ہے تاہم ’تمام بیرونی سازشوں اور اشتعال انگیزی کے باوجود وطن کا دفاع کرسکتے ہیں جب کہ پاکستان پہلے مضبوط تھا اور آج ناقابل تسخیر ہے‘۔

انھوں نے کہا کہ دفاع وطن پر قربان ہونے والے اے پی ایس کے شہدا، باچا خان یونیورسٹی کے شہید طلبا، بلوچستان کے وکیل، ایف سی، رینجرز، لیویز اور پاک فوج کے شہدا اور باہمت جوانوں اور ان کے باہمت لواحقین کی عظمت کو سلام پیش کرتا ہوں ، آپ کا جذبہ ہمارا حوصلہ بڑھتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ جرائم اور کرپشن کا گٹھ جوڑ امن کی راہ میں رکاوٹ ہے لیکن دانشوروں اور میڈیا کو اسلام کا پرامن پیغام پھیلانا ہوگا۔

Muhammad bin Salman Al Saud meets General Raheel Sharif

Prince Muhammad bin Salman also met Chief of Army Staff (COAS), General Raheel Sharif. During the meeting, regional security with particular focus on Middle East, issues of bilateral relations including defence cooperation and collaboration came under discussion, an Inter Services Public Relations (ISPR) press release issued on early Monday stated.

 

 

Audience Welcomes GEN Raheel Sharif In Shandur Polo Festival

 “The Shandur Festival is not only a good omen for the growth of national and international tourism in the country but it is also a clear indication for terrorists that the Pakistani nation will continue its traditions alive without any fear,” the army chief said in his address to participants of the annual festival. The COAS said the ongoing military operation Zarb-e-Azb will continue across the country for the lasting peace and stability.
“The success of this operation, however, depends on the nation’s support and the leading role of the country’s youth.” General Raheel reiterated terrorists and their facilitators are being chased out across the country and Pakistan will soon be recognised for its better education facilities, peace and progress in the world. The army chief also lauded the role of different institutions of the Pakistan Army and local government for facilitating the people of G-B and Chitral by providing rescue and relief activities in the region in wake of natural disasters.

 

 

 

 

 

Army soldiers rehearse for the funeral of Abdul Sattar Edhi

Army soldiers rehearse for the official ceremony for the funeral of Abdul Sattar Edhi in Karachi. The founder of Pakistan’s largest welfare organisation, Abdul Sattar Edhi, died July 8 at the age of 88, his son confirmed, as tributes swiftly poured in for the humble man almost unanimously revered as a national hero.

Military drill ‘North Thunder’ concludes in Saudi Arabia

Heads of state from across the Muslim world gathered in Saudi Arabia for the conclusion of a nearly three-week-long counter-terrorism military exercise that included 20 participating countries. The prime minister, along with leaders of the other participating nations, watched the contingents march past the stage, a press release from the PM House said. Pakistan’s fighter aircraft performed aerobatics, including a performance by two JF-17 Thunders and the Sherdil formation with its eight Karakoram-8 aircraft. SSG Commandos performed free fall exercises. They jumped from helicopters, carrying flags of the countries participating in the exercise.